چترال کے روایتی کھیل پولو کو سیاست کی نظر ہونے سے بچایاجائے۔قاضی فیصل احمدسید

چترال(چترال ایکسپریس)جنرل سیکرٹری پاکستان پیپلز پاڑٹی ضلع لوئر چترال قاضی فیصل احمد سید نے ایک اخباری بیان میں کہا ہے کہ جشن شندور 2022کے لئےچترال پولو ٹیمز کی سلیکشن میں چترال میں حیران کن اور چونکادینے والے فیصلے کئے گئے ہیں۔جو پولو ایسوسی ایشن اور سلیکٹرز کی انتخاب پر سوالیہ نشان ہی نہیں بلکہ بدنیتی پر مبنی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جہان چترال ٹاؤن، ریشن، کوشٹ اور مستوج سے تعلق رکھنے والے اچھے پلئیرز اور نامور کھلاڑی منظر سے غائب کیے گئےہیں۔ وہاں چترال پولیس، چترال سکاؤٹس اورچترال لیویز کے بھی مایہ ناز ہولوپلئیرز سلیکٹر ز کے بد نیتی پر مبنی سلیکش میں نظر اندازکیے گئے ۔

انہوں نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر چترال اور کمشنر ملاکنڈ ڈویژن پولو سلیکشن پرفوری نوٹس لیں۔پولو چترال کا قدیمی اور روایتی کھیل ہے جو چترال اور چترالیوں کی ثقافت ہے۔اس کو سیاست اوراقربا پروری کی نظر نہ کیا جائے۔ چترالی عوام اس سلیکشن اور ایسی اجارا داری کو قبول نہیں کرتے۔سلیکشن میں چند چیزیں انتہائی اہم ہوتی ہیں،مثلاً کھلاڑی، کھلاڑی کی پرفارمینس،اُس کا زاتی گھوڑا،اور گھوڑے کی پرفارمینس وغیرہ،جن کو سلیکشن ٹیم نے یکسر نظر انداز کرکے اپنے منظور نظر پلئیرز سلیکٹ کر کے چترالی ثقافت،چترال کی عوام اور پولو کے ساتھ مذاق کیا ہے،جس کی بھرپور انداز میں مذمت کرتے ہیں۔ قاضی فیصل نےڈپٹی کمشنر اور کمشنر ملاکنڈ کو نوٹس لینے کی درخواست اور اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہماری روایتی کھیل کو سیاست کی نظر ہونے سے بچایا جائے۔بصورت دیگر ہم کسی بھی حد تک جائینگے اور ہر فورم پر اپنی آواز اٹھائیں گے۔امید کرتے ہیں کہ ڈی سی اور کمشنر ملاکنڈ اس کا نوٹس لیں گے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔