بلدیاتی انتخابات میں مجھےایک سوچے سمجھے منصوبہ اور سازش کے تحت ہرایا گیا۔محمد اسحاق

چترال (چترال ایکسپریس) آل ورکشاپس ایسوسی ایشن لویر چترال کے ضلعی صدر اور ممتاز سماجی رہنما محمد اسحاق نے کہا ہے کہ گزشتہ بلدیاتی انتخابات میں گولدور کے نیبرہڈ کونسل کے الیکشن میں انہیں ایک سوچے سمجھے منصوبہ اور سازش کے تحت ہر اکر انہیں عوام کی خدمت کرنے سے محروم کردیا گیا۔

چترال پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ریٹرننگ افیسر کے دفتر میں بیلٹ پیپروں کی گنتی کے فوری بعد پولنگ کاایک اسٹاف نے ان سے معذرت کرتے ہوئے بتایاکہ ان کی ووٹوں کو غلطی سے دوسرے امیدوار کے کھاتے میں شمار کئے گئے ہیں اور ساتھ انہیں تسلی دی کہ ریٹرننگ افسر کے دفتر میں ضائع شدہ ووٹوں کی گنتی کی جائے گی جس میں ان کے ساتھ انصاف کیا جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ جب ریٹرننگ افیسر /اسسٹنٹ کمشنر لویر چترال کے دفترمیں ووٹوں کی گنتی کی گئی تو ان کے حق میں پڑے ہوئے ووٹ غائب تھے جنہیں یا توپولنگ اسٹیشن اور ریٹرننگ افیسر کے دفتر کے درمیان ضائع کرادئیے گئے یا اسی دفتر میں ان کو اٹھائے گئے۔ انہوں نے کہاکہ وہ ایک سماجی کارکن ہیں اور چوبیس گھنٹہ عوام کی خدمت میں مصروف رہنے کو عبادت کا درجہ دیتے ہیں لیکن مافیا کو یہ سب کچھ منظور نہ تھا اس لئے انہیں ایک منصوبے کے تحت ہرایا گیا۔ محمد اسحاق نے حکومت اور تمام متعلقہ ایجنسیوں سے اپیل کی ہے کہ ان کے ساتھ کی گئی انتخابی دھاندلی کا سراغ لگاکر اس میں ملوث افراد کو سزا دی جائے اور اس حلقے میں دوبارہ الیکشن منعقد کرائے جائیں تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوسکے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔