بنوں اورڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن میں 10روزہ خصوصی انسداد پولیومہم کا آغاز 15اگست سے ہو رہاہے

پشاور(چترال ایکسپریس) )صوبہ خیبرپختونخوا کے بنوں اورڈیرہ اسماعیل خان ڈویژن میں 10روزہ خصوصی انسداد پولیومہم کا آغاز 15اگست بروزپیرسے ہو رہاہے۔
مہم کے دوران پانچ سال سے کم عمر کے 10لاکھ58ہزارسے زائد بچوں کو پولیو قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے ان میں سے 9لاکھ94ہزار 583بچے جن کی عمر 4ماہ سے 5سال تک ہے ان بچوں کوپولیو کے ٹیکے بھی لگائے جائیں گے جس کے لئے3ہزار16تربیت یافتہ اور تجربہ کار اہلکار وں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے جو بچوں کو پولیو ٹیکے لگائیں گے اس کے علاوہ 5ہزار261موبائل ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جو بچوں کو پولیو کے قطرے پلوائیں گے۔جس کا مقصدبچوں میں پولیوکے خلاف قوت مدافعت کومزیدبڑھاناہے حفاظتی ٹیکہ جات مہم لکی مروت،ٹانک، شمالی وزیرستان، ڈی آئی خان، جنوبی وزیرستان اور بنوں میں ہو گی اس بات کافیصلہ پولیوکی روک تھام کے لیے قائم ادارہ ایمرجنسی آپریشن سنٹرمیں اعلیٰ سطحی اجلاس میں کیاگیا جس کی صدارت ایمر جنسی آپریشن سنٹر کے کوآرڈینیٹر آصف رحیم نے کی اجلاس میں ڈائریکٹرای پی آئی ڈاکٹرعارف، عالمی ادارہ اطفال(یونیسیف)کے ٹیم لیڈ،عالمی ادارہ صحت(ڈبلیوایچ او)کے ٹیم لیڈ،این سٹاپ آفیسر اوردیگرمتعلقہ حکام نے شرکت کی اجلاس میں پولیوکے بڑ ھتے ہوے کیسز سے متعلق مجموعی صورت حال سے نمٹنے کیلئے جامعہ حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے۔ پولیو ٹیکہ جات مکمل طورپر محفوظ ہیں اور 4ماہ سے5سال تک کے تمام بچوں کودئے جاسکتے ہیں جس میں بیمار اور کمزور بچے بھی شامل ہیں پولیو سے بچاؤ کے یہ ٹیکے بچوں کوگھروں کے بجائے نزدیکی خصوصی رسائی مراکز میں لگائے جائینگے کوآرڈینیٹر ای اوسی آصف رحیم نے معاشرے کے تمام طبقات خصوصا والدین پر زور دیا کہ وہ بچوں کو عمر بھر کی معذوری سے بچانے میں بھرپور تعاون کریں اور اپنے بچوں میں پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کے ساتھ ساتھ ٹیکوں کے لئے بھی اپنے قریبی خصوصی رسائی مراکز ضرورلے کرجائیں مہم کے دوران ڈیوٹی سرانجام دینے والے اہلکاروں کی سیکورٹی کے لئے بھی خاطرخواہ انتظامات کئے گئے ہیں.

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔