اپرچترال بیوی کے قتل میں ملوث ملزم شوہر کو13سال قید اورتین لاکھ جرمانے کی سزا

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس)مبینہ طور پر بیوی کا گلہ گھونٹ کر قتل کرکے الیکٹرک کرنٹ لگنے کا ڈرامہ رچانے والے سنگدل شوہر کو ایڈیشنل سیشن جج اپر چترال کی عدالت نے جرم ثابت ہونے پر10 سال بامشقت اور تین لاکھ روپے جرمانے کی سزا دے دی جبکہ عدالت نے واردات کے نشانات غائب کرنے پر 2سال قید اور پولیس کو غلط اطلاع فراہم کرکے کیس کا رخ موڑنے کی کوشش پر ایک سال قید اور مجموعی طور پر 13سال کی سزا سنائی۔ استعاثہ کے مطابق مئی 2018ء میں تھانہ بونی کے حدود میں واقع سنوغر گاؤں میں عاطف الرحمن ولد شیر فضل بیگ نے طیش میں آکر اپنی دوسری بیوی گل ظاہرہ کا گلہ گھونٹ کرجان سے ماردیا اور واردات والے کمرے سے باہر آکر ان کو بجلی کا کرنٹ لگنے کا واویلا مچایا جس پر رشتہ داروں اور ہمسایوں نے ان کو فرسٹ ایڈ دینے کے بعد ہسپتال منتقل کردیا جہاں پر انہیں مردہ قرار دیا گیا اور پوسٹ مارٹم رپورٹ میں ان کے گلے میں انگلیوں کے نشانات پائے جانے پر ان کے بھائی نے ان پر قتل کی دعویداری کی جس پر انہیں حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی گئی۔ استعاثہ کی طرف سے قتل کا الزام ثابت ہونے پر سیشن کورٹ اپر چترال نے انہیں عمر قید کی سزا سنائی تھی جس کے خلاف اپیل کرنے پر پشاور ہائی کورٹ نے کیس کو دوبارہ نظرثانی کے لئے عدالت میں واپس بھیج دیا گیا تھا۔ جمعرات کے روز ایڈیشنل سیشن جج اپر چترال امجد حسین نے ملزم کو مجموعی طور پر 13سال قید اور تین لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنادی جس پر کمرہ عدالت میں موجود مجرم کو پولیس نے دوبارہ اپنی تحویل میں لے لیا۔ سرکار کی طرف سے ڈسٹرکٹ پبلک پراسیکیوٹر فضل معبود جبکہ ملزم کی طرف سے عصمت عیسیٰ ایڈوکیٹ اور سراج علی خان ایڈوکیٹ پیش ہوئے۔ فیصلہ سناتے وقت کمرہ عدالت میں ملزم کے والدین اور ان کی پہلی بیوی سے تین بچے اور متقولہ بیوی سے تین بچے بھی موجود تھے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔