گندم کے بحران کے سلسلے میں عوامی تحریک کے نمائندوں کی ڈی سی لویر چترال محمد علی خان کے ساتھ نشست

چترال ( چترال ایکسپریس )گندم کے بحران کے سلسلے میں عوامی تحریک کے نمائندوں کی نشست ڈپٹی کمشنر لویر چترال محمد علی خان کے ساتھ ان کےدفتر میں منعقدہوئی جس میں تحریک کے رہنماؤں نے اپنے مطالبات کا اعادہ کرتے ہوئے کہاکہ چترال میں فلور ملز مالکان کی بندش اور چترال کے کوٹے کے گندم کو ان ملز کو فراہمی کا سلسلہ مکمل طور پر بند کرنے اور چترال کو گللگت بلتستان کی طرز پر گندم پر اسپیشل سبسڈی دے کر 2000روپے میں 100کلوگرام گندم کی دستیابی ہونے تک تحریک کو جاری رکھا جائے گا۔ انہوں نے مطالبات کو نہ ماننے کی صورت اگلے ماہ ہونے والی شندور فیسٹول کو احتجاجی طور پر بند کرانے کی دھمکی دے دی۔ تحریک کی طرف سے مغفرت شاہ،مولانا جمشید احمد، صفت زرین،ایم آئی خان سرحدی ایڈوکیٹ، میر دولہ خان ایڈوکیٹ، ساجد اللہ ایڈوکیٹ، وجیہہ الدین، شجاع الحق، فضل ربی جان، شجاع الحق بیگ، سرورکمال ایڈوکیٹ،فخراعظم اور دوسرے موجود تھے۔ ڈی سی لویر چترال نے تحریک کے وفد کو یقین دہانی کرائی کہ وہ ان کے مطالبات کو بالائی حکام تک پہنچانے کی بھر پور کوشش کریں گے تاکہ مسئلے کا حل نکل سکے۔ نو تعینات ڈی پی او لویر چترال صلاح الدین اوراے ڈی سی عرفان الدین بھی اس موقع پر موجود تھے۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔