اپر چترال کے مختلف علاقوں کےلئےخودساختہ کرایوں کی روک تھام کے لئے ضلعی انتظامیہ سے کارروائی کامطالبہ

چترال(چترال ایکسپریس )اپر چترال کے دونوں تحصیلوں کے دور دراز جگیوں پر واقع وادیوں کے عوام اورتاجر برادری نےضلعی انتظامیہ اور ٹریفک پولیس سے مطالبہ کیا ہے کہ ٹیکسی ڈرائیوروں کی طرف سےخودساختہ کرایوں کی روک تھام کے لئے دو ہفتوں کی ناکہ بندی کرکے تمام ٹیکسی ڈرائیوروں کو سرکاری کرایہ نامہ پر پابندکیا جائے۔ایک مشترکہ بیان میں اکثر مسافروں نے ڈپٹی کمشنر اور ڈی پی او اپرچترال سے درخواست کی ہے کہ زیادہ تر ٹیکسی ڈرائیورمن مانی کرکے 28 کلومیٹر کے لئے 600 روہے اور سامان پر 400 روپے فی من لیتے ہیں جو ظلم ہے اور یہ ظلم کسی دوسرے اضلاع میں نہیں۔اکثر وبشتر مسافروں نے مثال دیتے یوئے کہا کہ چترال سے بونی کا فاصلہ76 کلومیٹر ہے جس کے لئے ٹیکسی ڈرائیور 500 روپے کرایہ لیتے ہیں۔بونی سے مستوج کا فاصلہ 28 کلومیٹر جس کے لئے 600 روپے اور مستوج سے لاسپور کا فاصلہ 30 کلومیٹر جس کا کرایہ 500 روپیہ لیا جارہا ہیں جبکہ چترال سے بونی تک کے روڈ سے بونی مستوج روڈ کی حالت بھی بہتر ہے۔مستوج ،یارخون،لاسپور،تورکہو،موڑکہو اور تریچ کے عوام نے 15 دنوں کے لئے خصوصی ناکہ بندی کرکے سرکاری کرایہ نامہ نافذ کر نے کا مطالبہ کیا۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔