دریائے چترال آدم خور بن گیا ۔ 2023 میں دو درجن سے زیادہ مردو خواتین کو نگل لیا ۔

مرنے والوں پر خود کشی کا الزام ، منگل کے روز ایک اور نوجوان نے زندگی کا چراغ گل کر دیا ۔ کیا سب مرنے والوں نے خود کشی کی ؟

چترال(محکم الدین)دریائے چترال آدم خور بن گیا ۔ 2023 میں دو درجن سے زیادہ مردو خواتین کو نگل لیا ۔

مرنے والوں پر خود کشی کا الزام ، منگل کے روز ایک اور نوجوان نے زندگی کا چراغ گل کر دیا ۔ کیا سب مرنے والوں نے خود کشی کی ؟

لوئر چترال چیو پل دنین سے دریائے چترال میں گرنے والے چترال یونیورسٹی کے بی ایس کے طالب علم  نوجوان وقاص ولد عمر محمد ساکن کوشٹ اپر چترال  کی ڈیڈباڈی کو ریسکیو1122 کی ٹیم نے دریاءسے برآمد کرکے ڈی ایچ کیو ہسپتال لوئر چترال منتقل کر دیا ۔ منگل کے روز 4 بجے کے قریب چیو پل دنین سے ایک نوجوان نامعلوم وجوہات کی بنا پر دریائے چترال میں گرا ۔ تاہم ریسکیو1122 کی ٹیم نے لوئر چترال کے مقام اورغوچ میں سرچ اپریشن کے دوران دریائے چترال سے لاش ریکور کر لیا ہے۔ نوجوان کے دریا میں گرنے کی وجہ معلوم نہ ہو سکی ہے ۔ کہ آیا یہ عمل خود کشی تھا. یا حادثہ تھا ۔ چترال میں سال 2023 کے دوران اب تک دریائے چترال میں گرنے کے درجنوں واقعات ہوئے ہیں۔ جن میں زیادہ تعداد خود کشی کے واقعات کی ہیں ۔ اور اس عمل میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ۔ لیکن اس قبیح فعل کی وجوہات معلوم کرنے اور اس کے تدارک کیلئے سرکاری یا غیر سرکاری سطح پر کسی قسم کے اقدامات نہیں کئے جارہے ۔ جس کی وجہ سے چترال صوبہ خیبر پختونخوا میں خود کشی کے واقعات میں تشویشناک نمبر پر آچکا ہے ۔ اس لئے اس کے سد باب کیلئے سنجیدہ اقدامات کی اشد ضرورت ہے۔ خود کشی کے حوالے سے چترال پولیس کی تفتیش نہ ہونے کے برابر ہے ۔ ایسے واقعات کو خود کشی قرار دے کر فائل بند کرکے جان چھڑائی جاتی ہے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔