دریچہ اسلام۔۔۔وادی فاران کا ہیرو ۔۔ 3:تحریر ۔۔مبشرالملک

# چاہ زم زم ۔۔

عبدالمطالب۔۔۔۔ ۔۔۔۔ نے خواب میں دیکھا کہ اسے ۔۔۔ زم زم کا کنواں۔۔۔ کھدنے کا حکم دیا جاررہا ہے ۔ اس نے کچھ ساتھیوں کو ساتھ لے کر کھداءی شروع کی دوران کھداءی ۔۔۔بنو جرہم۔۔۔ کے مکہ سے نکلتے وقت کنواں میں ڈالے گءے تلواریں ، زریں، اور بہت سارے سامان برآمد ہوءے۔۔۔ مکہ میں یہ خبر پھیل گءی تو ۔۔۔ اہل مکہ ۔۔۔اس کام میں شراکت کے لیے لڑنے جگھڑنے کو تیار ہوءے آپ نے کہا میں ۔۔۔ نذر ۔۔۔ مان چکا ہوں اس کام کو خود کر نے کا۔ لہزا اور لوگ اس کام میں شریک نہیں ہوسکتے۔ یہ بات بڑھ کر ایک جھگݱے کی صورت اختیار کر لی آخر اس قضیے کو حل کرنے کے لیے اہل قریش ایک ۔۔۔ کاہینہ۔۔۔
عورت کے پاس پہنچ گءے لیکن اس عورت نے ایسے علامات دیکھیں کہ فیصلہ ۔۔۔ عبدالمطالب کے حق میں دیا۔
اس موقع پر آپ نے برملا اپنے نذر (۔منت) کااظہار کیا ” اگر میرے بیٹے ہوتے تو اس کام اور جھگڑنے والوں کے مقابلے میں میرے دست و بازو بنتے ۔۔۔ اگر اللہ تعالی نے مجھے دس لڑکے عطا کیے اور وہ اس عمر کو پہنچے کہ باپ کی دفاع کر سکیں تو میں ایک بیٹے کو اللہ کے نام پر قربان کردوں گا۔ اور ایسا ہی ہوا اللہ تعالی نے وقت کے ساتھ ساتھ سردار مکہ ۔۔۔۔ کودس بیٹوں سے نوازا جن میں حارث ، زبیر، ابوطالب، عبداللہ، حمزہ ، ابو لہب ، غیداق ، مقوم ، صفار اور عباس قابل ذکر ہیں۔ بیٹیوں میں ام الحکیم ، برہ ، عاتکہ ، صفیہ ، ازوی اور اُمیمہ شامل ہیں۔

# مکہ کے چاند۔

علماء یہود کو جب عبداللہ کی پیداءش اور خوبصورتی کا پتہ چلا تو عبداللہ کو قتل کرنے کے لیے ایک خفیہ دستہ تشکیل دے کر مکہ روانہ کی ایک شکار گاہ میں وہ عبداللہ کو ڈونھڈنے میں کامیاب ہوےاور انہیں قتل کرنے کو روانہ ہوءے اس بات کا جب ۔۔۔۔ وہب بن عبدالمناف۔۔۔۔ کو علم ہوا تو ایک جمعیت کے ساتھ مدد کو پہنچے وہاں جاکے دیکھا کہ آسمان سے اسی جمعت اتری ہے اور یہود کو اس اقدام سے منع کرنے میں کامیاب ہوچکی ہے لیکن وہ عام انسانوں سے نہیں لگ رہے ہیں۔ اس واقع سے متاثر ہوکے ۔۔۔ سردار وہیب گھر آکے اپنی بیوی ۔۔۔ برہ ۔۔۔ کو عبداللہ سے اپنی بیٹی ۔۔۔ آمنہ ۔۔۔ سے نکاح کی پیش کش کے لیے بیھجا۔ حضرت آمنہ زنان قرش میں عفت و جمال کے لحاظ سے منفرد مقام رکھتی تھیں جو سردار قریش عبدالمطالب نے قبول کی۔
بحوالہ۔ سیرت نبی ۔ محمد عربی۔ سرور کونین

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔