گورنمنٹ سینٹینل ماڈل سکول چترال کے زیرا ہتمام سائنس اینڈ آرٹ نمائش کی احتتامی تقریب

چترال (چترال ایکسپریس) گورنمنٹ سینٹینل ماڈل سکول چترال کے زیراہتمام سائنس اینڈ آرٹ نمائش اتوار کے روز احتتام پذیر ہوئی جس میں لویر چترال کے ضلعے سے درجنوں پرائیویٹ اور پبلک سیکٹر کے سکولوں اور کالجوں کے طلباء وطالبات نے جوش وخروش سے حصہ لیا۔ احتتامی تقریب میں ڈپٹی کمشنر لویر چترال محمد عمران خان مہمان خصوصی تھے جس نے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسر محمود غزنوی، سکول پرنسپل فضل سبحان اور محکمہ تعلیم ک دوسرے افسران کے ساتھ نمائش میں نمایان کارکردگی کا مظاہر ہ کرنے والوں میں انعامات اور شیلڈ تقسیم کئے۔

اس موقع پر اپنے خطاب میں ڈی سی لویر چترال محمدعمران خان  نے کہاکہ چترال میں بچوں اور بچیوں میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے اور وہ اس لحاظ سے خیبر پختونخوا میں کسی بھی شہر اور علاقے کے اسٹوڈنٹس سے کم نہیں ہیں جس کا مظاہر ہ انہوں نے سائنس اور آرٹ کے مختلف شعبوں میں اپنے پراجیکٹ اور ماڈلز کے ذریعے مظاہرہ کیا۔ انہوں نے طالب علموں پر زور دیاکہ وہ موبائل فون پر اپنا وقت بے جا ضائع کرنے کی بجائے کتابوں کے ساتھ اپنا رشتہ ناطہ مضبوط کرے جوکہ انہیں کامیابی کے راستے پر لے جاسکتی ہیں اور مسابقت کے آنے والے دور کے لئے انہیں اپنے آپ کو ہر لحاظ سے تیار رکھنا ہے۔ انہوں نے منظم اور مربوط بنیادوں پر سائنس اینڈ آرٹ نمائش کا انعقاد ممکن بنانے پر سکول پرنسپل فضل سبحان اور ان کی ٹیم کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہاکہ ایسی سرگرمیوں سے اسٹوڈنٹس کی مخفی صلاحیتیں نکھر کر سامنے آجاتی ہیں اور نوجوان نسل کا ٹیلنٹ ضائع ہونے سے بچ جاتی ہے۔ انہوں نے اسٹوڈنٹٹس اور ان کے تعلیمی اداروں کے جملہ مسائل حل کرانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہاکہ وہ کسی بھی اپنے حل طلب مسائل لے کر ان کے پاس آسکتے ہیں۔

اس موقع پر ڈی ای او محمود غزنوی نے بھی فضل سبحان کی قیادت میں سکول انتظامیہ کی کاوشوں کی داد دیتے ہوئے کہاکہ اس ایونٹ کو مسلسل دوسری مرتبہ منانا بہت ہی قابل قدر کام ہے جبکہ اس سال اسے ڈویژنل سطح پر منانے کا فیصلہ کیا گیا تھا جوکہ بعض ناگزیر وجوہات کی بنا پر منسوخ کردیا گیا۔ انہوں نے کوالٹی ایجوکیشن کے سلسلے میں ہم نصابی سرگرمیوں کی اہمیت پر روشنی ڈالی اور اسے مزید ترقی دینے کے سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کی کردار کو ناگزیر قرار دیا اور موجودہ ڈی سی کی حوصلہ افزائی پر اطمینان کا اظہار کیا۔

بعدازاں نمائش میں پوزیشن حاصل کرنے والوں میں انعامات تقسیم کئے گئے جن میں مڈل کلاس اور ہائی کلاسوں کی الگ الگ کٹیگریاں شامل تھیں۔ ہائی کٹیگری میں گورنمنٹ سینٹینل ماڈل سکول چترال نے ریاضی، آغا خان ہائیر سیکنڈری سکول نے فزکس، کمپیوٹر سائنس اور کیمسٹری میں، گورنمنٹ گرلز کالج دروش نے ایمبرائڈری اور پینٹنگ میں، گورنمنٹ سینٹینل ماڈل سکول د نین نے بیالوجی اور گورنمنٹ گرلز کالج چترال نے خطاطی میں پہلی پوزیشن کے حقدار قرار پائے۔ مڈل کٹیگری میں گورنمنٹ گرلز مڈل سکول سین لشٹ نے پنٹینگ،گورنمنٹ گرلز ہائی سکول موڑدہ نے ایمبرائڈری، گورنمنٹ گرلز مڈل سکول ژوغور نے خطاطی میں پہلی پوزیشن حاصل کی جبکہ دوسری اور تیسری پوزیشن میں گورنمنٹ ہائی سکول کوجو اور گورنمنٹ ہائی سکول سویر کے طلباء نے نصف درجن سے ذیادہ انعامات حاصل کرلی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔