*اقسام اور مراتب وحی* (18)…*تحریر۔۔. شہزادہ مبشرالملک*

رسالت اور سیرت رسولﷺ کے موضوع پر ۔۔ ۔ وحی۔۔ کے اقسام جو بیاں ہوئے ہیں ان کے حوالے سے علامہ ان قیم یہ اقسام بیاں کرتے ہیں۔

*سچے خواب*

نبوت سے پہلے ہی حضور انور ﷺ پر سچے خوابوں کا ظہور ہونے لگا۔

# *دل میں بات ڈالنا* ۔

آپﷺ نے فرمایا۔۔۔ حضرت جبریل امین نے یہ بات میرے دل میں ڈال دی کہ بندے کی موت اس وقت تک نہیں اتی جب تک وہ اپنا رزق پورا نہ کر لے۔ ،
، اس کیفیت میں فرشتہ نظر نہیں اتا تھا۔

# *ادمی کی شکل میں انا* ۔

حضرت جبرایل ادمی کی شکل اختیار کرکے حاضر خدمت ہوتے۔اور اصحاب بھی اسے دیکھ لیتے۔کھبی کبھار حضرت وجیہ کلبی کی شکل دھار کر حاضر خدمت ہوتے۔

# *گھنٹی کی اواز* ۔

وحی جب اتا تو گھنٹی کی سی اواز اتی اگر اپ سواری پر ہوتے تو وہ دباو میں اکر بیٹھ جاتا۔اور چہرہ انور کا رنگ سرخ ہوجاتا۔

# *اصل شکل کے ساتھ انا۔*

حضرت جبرایل امین اپنی اصلی شکل میں اتے سورہ نجم میں اس کا تذکرہ موجود ہے ۔

# *وحی معراج* ۔

معراج کی شب ملاقات کے دوران اللہ تبارک وتعالی نے روبرو احکام نماز وغیرہ کی صورت جو عنایت کیں اسے وحی معراج کے نام سے جانا جاتا ہے۔۔

# *حجابی وحی* ۔

حجاب میں جس طرح حضرت موسی علیہ سلام پر کی ۔اس کا بھی سفر معراج میں ذکر موجودہے۔۔

**مرتبہ وحی* ۔*

غیر مسلم بالخصوص اور کچھ روشن خیال مسلم اہل علم بالعموم اس بات پر اعتراض اور شکوک و شبہات پیدا کر رہے ہیں کہ ایک ۔۔۔عام انسان ۔۔۔ جو رواجی ۔۔ علم ۔۔۔ سے بھی دور کا واسطہ نہ رکھتا ہو ۔وہ صرف اللہ کی طرف سے ۔۔۔ وحی ۔۔۔ یعنی پیغام آنے کے بعد اتنی ۔۔۔عظیم مدبر۔۔۔۔ استاد۔۔۔ ۔مربی اور ۔۔۔باکمال شخصیت۔۔۔ کا۔۔ مالک ۔۔۔کیسے بن سکتا ہے ۔ اس خیال پر سوچنے سے پہلے حضور اقدسﷺ کے گھرانے پیدإیش سے قبل الہی انتظامات اور کمالات جوپہلے رقم ہوئے پر بھی نگاہ ڈالنا چاہیے جو ہر انسان کے حصے میں نہیں آتے بلکہ اللہ ﷻجسے نبوت کے لیے منتخب کرنا چاہتا ہے اس کی حفاظت اور تربیت کا انتظام بھی خود فرماتا ہے ۔ اس سوال کی مزید وضاحت اور جواب تمام مسلم اسکالرز میں علامہ طالب جوہر نے جس خوبصورتی اور اسان الفاظ میں دی ہے وہ لاجواب ہے ۔علامہ فرماتے ہیں ۔ّّ کائنات کی تخلیق ۔۔۔۔بے جان۔۔۔ مادے سے ہوئی ہے۔ ایک پھتر کو لاکھوں سال بھی پڑا رہنے دیں تو وہ ۔۔۔پھتر۔۔ ہی رہے گا اگر اس میں ۔۔ پرورش۔۔ پانے کی صلاحیت یعنی۔۔۔۔ جان ۔۔۔ ڈال دی جائے تو یہ ۔۔۔ بے جان ۔۔۔ سے۔۔۔ جاندار۔۔۔ کی فہرست میں آگیا اور ۔۔۔ ہجر ۔۔۔ سے ۔۔۔ شجر ۔۔ بن گیا ۔۔۔۔ اور اس کے مرتبہ و مقام میں زمین و آسمان کا فرق اگیا کہاں بے جاپھتر کہاں پھلتا پھولتا درخت ۔۔۔ اب اسی درخت میں قدرت نے ایک اور صلاحیت۔۔۔ خواہش ۔۔۔ کی بڑھا دی چلنے پھرنے کی کی طاقت دی۔۔۔ تو وہ درخت سے ۔۔۔ حیوان ۔۔۔بن گیا اور اپنی مرضی سے جو چاہا کھایا پیا چلا ۔۔۔۔اب قدرت نے ایک صلاحیت اوربڑھا دی ۔۔۔ عقل۔۔۔ تو وہی گدھا۔۔۔ سے ۔۔۔ انسان ۔۔۔ بن گیا ۔گدھا اپنی خواہش کے مطابق زندگی گزار تا ہے اور انسان ۔۔۔ عقل ۔۔۔ کے مطابق ۔۔۔ اسی عقل کو لے کر انسان نے آسمانوں ۔سمندروں کو تسخیر کیا۔۔۔ بےآب گیاہ ریگستانوں کو۔۔۔ لالہ زاروں۔۔۔ میں بدل دیا عقل کے سہارے سائنس اور ٹکنالوجی کی دنیا میں۔۔۔ انقلاب ۔۔۔ برپا کی ۔اپنا دبدبا قائم کرنے کے لیے کڑوروں اپنے ہم جنس انسانوں کا ۔۔۔قتل عام ۔۔۔کیا کڑوروں کے لیے۔۔۔ دنیا جنت۔۔۔ بنا دی۔ صرف ایک۔۔۔ عقل۔۔۔ کے اضافے۔۔۔۔ سے۔
اب قدرت نے ایک اور صلاحیت ۔۔۔ وحی الہی۔۔۔۔ کا اضافہ کیا۔۔۔۔ تو ۔۔۔بنی بن گیا۔ اب یہ اتنا بڑا فرق ہے ۔۔۔ انسان اور نبی میں۔
جتنا۔۔۔ انسان اور ۔۔۔گدھے۔۔۔ میں۔
۔۔۔ حیوان ۔۔۔ صرف خواہشات کے تابع ۔۔۔ زندگی گزارتا ہے مرضی کا مالک ہے اورانسان صرف ۔۔۔عقل۔۔۔ کے تابع۔۔۔۔ جبکہ ۔۔۔ نبی ۔۔۔ صرف وحی اور مرضی الہی کے تابع۔

حضرت اقبال نے اسی نکتے کی وضاحت کرتے ہوئے فرمایا تھا۔
؁ اچھا ہے دل کے ساتھ رہے پاسبان عقل
لیکن کبھی کبھی اسے تنہا بھی چھوڑ دے
اسی طرح نبی کے ماننے والے اور باعمل مسلمانوں میں بھی اتنا ہی فرق ہے کیونکہ ایمان لانے کے بعد
۔۔۔مسلمان ۔۔۔ الہی اور نبوی تعلیمات کے تابع ہوتے ہوئے فیصلہ کرتا ہے اور ہر کام میں سنت رسول کو ترجیع دیتا ہے اور نہیں دیتا تو دینا چاہیے یہی ۔۔۔ ایمان۔۔۔ کا تقاضا ہے اور ۔۔۔۔ صحآبہ کرام اسی تقاضے کو ترجیع دینے کی وجہ سے ۔۔۔۔ ستاروں ۔۔۔ کی چمکتے نظر آتے ہیں ۔ عام مسلمانوں۔ مومنوں ۔اولیاء صحآبہ ۔ انبیاء ۔رسل ۔فرشتوں تک میں مقام مرتبت کے لحاظ سے زمین و آسمان کے فرق موجود ہیں ۔

بحوالہ۔۔۔ بخاری شریف۔ ۔محمد رسول اللہ ۔ ۔نہج البلاغہ ۔
الرحیق المختوم ۔خطبات جوہری۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔