اپر چترال سے شایان خان کا شاندار علمی اعزاز

چترال (چترال ایکسپریس ۔۔شمس الحق قمر)شایان خان کا تعلق بنیادی طور پر اپرچترال، یارخون سے ہے لیکن پیدائش سے بونی کا مقامی باشندہ ہے ۔ حال ہی میں متحدہ ریاست ہایے امریکہ کی ایک مشہور یونیور سٹی ایلینوسUniversity of Illinois میں سول انجینئرنگ میں ریاستی وظیفے کے ساتھ داخلہ لینے میں کامیاب ہوا ہے ۔
شایان خان اپنے دور کے طلبہ میں ہمیشہ امتیازی مقام کا حامل رہاہے ۔ پرائمری تعلیم پامیر پبلک سکول بونی سے حاصل کرنے کے بعد آغا خان ہائیر سیکنڈری سکول چترال سے زہنی بالیدگی شروع ہوئی۔ اس سکول میں اُنہیں اپنے درخشاں مستقبل کے لیے راستہ منتخب کرنے کے لیے بہترین راہنمائی کے ساتھ بے حد علمی حوصلہ افزائی بھی ملی ۔اُنہیں کسی بھی مشکل علمی مرحلے سے نبرد آزما ہونے کا بے حد شوق تھا اس لیے زندگی کی تمام لذتوں کو پس پشت ڈال کر منزل کی جستجو میں مطالعےمیں سر کھپاتے رہے ۔ دوران طالب علمی اُنہوں نے پیشہ وارانہ کتب کے ساتھ زندگی کی کئی ایک زاویوں سے متعلق بے شمار کتب کا بھی مطالعہ کیا ۔ پشاور ایڈورڈز کالج سے فارغ تحصیل ہونے کے بعد ملک کی علمی میدان میں صف اول کی جامعات میں سے ایک جامعہ ، نیشنل یونیورسٹی اف سائنس تک پہنچنے میں کامیاب ہوئے ۔ یہاں علم کی تمام کھڑکیاں اُن کی زندگی کی طرف وا ہوئیں اور امتیازی نممبروں سے یہاں بھی بڑے بڑوں کو مات دے کر منزل کی طرف سفر جاری رکھا ۔ اُنہوں نے اس کامیابی کو استاتذہ کی مخلص تد ریس اور والدین کی عاؤں کا نتیجہ قرار دیا ۔ ایک سوال کے جواب میں اُنہوں نے اپنی تمام تر کامیابی کا سہرا اپنے نانا سلطان وزیر، نانی ، ماموں کرنل سلطان خان اور ممانی کے سر سجاتے ہویے کہا کہ آج وہ جو کچھ بھی ہیں اِنہی افراد کی وجہ سے ہیں ۔ مستقل کے بارے میں بات چیت کرتے ہوئے اپرچترال کے چمکتے ستارے نے کہا کہ ٓنے والے تین چار سال اُن کی زندگی کے اہم ترین سالوں میں سے ہوں گے کیوں کہ اس دوران اُنہیں اتنی محنت کرنی پڑے گی کہ پاکستانی قوم اُنہیں انجینرئنگ کی دنیا کے صف اول کے سائنسدانوں میں دیکھ سکے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔