چترال کے تمام سیاسی پارٹیوں کے نمائندوں کی اپنے منشورپیش کرنے کے حوالے سے پریس کلب میں تقریب

چترال(چترال ایکسپریس )کاروان تنظیم کے الیکٹورل کوالٹی انکلوسیو پراجیکٹ (EQUIP)کے کوارڈینیٹر سرزمین خان نے چترال پریس کلب میں چترال کے تمام سیاسی پارٹیوں کے نمائندوں نے اپنے منشورپیش کرنے کے حوالے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کاروان سماجی تنظیم ملاکنڈ ڈویژن میں سماجی تنظیموں کے نیٹ ورک ،ملاکنڈ ڈویلیپمنٹ نیٹ ورک کا منتظم ادارہ ہے۔ ملاکنڈ ڈیویلپمنٹ نیٹ ورک پاکستان کے سماجی تنظیموں کے نیٹ ورک فافن یعنی فری انیڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک کا ممبر نیٹ ورک ہے۔ انہوں نے کہاکہ فافن پاکستان بھر میں کام کرنے والے 20 سول سوسائٹی نیٹ ورکس کا ایک نیٹ ورک ہے۔ فافن کے نیٹ ورکس میں قریباً 500 سول سوسائٹی تنظیمیں شامل ہیں۔فافن کا مقصد پاکستان میں جمہوریت کو مستحکم بنانا ہے اور اس مقصد کی خاطر ہم انتخابات، قانون ساز اسمبلیوں اور گورننس امور کے براہ راست مشاہدے کی بنیاد پر ان شعبوں میں اصلاحات کے لیے سرگرم عمل ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اسی سلسلے میں فافن نے ائندہ آنے والے الیکشن کو روائتی الیکشن کے بجائے حقیقی جمہوری الیکشن کی طرف لے جانے کے طرف ایک قدم اٹھایا ہے۔ اس مقصد کے حصول کیلئے کاراون نے ایک پروگرام تشکیل دیا ہے جس میں تمام امیدواران کو ایک پلیٹ فارم مہیا کیا جارہا ہیں جہاں امیدواران اپنے الیکشن پروگرام سے عوام کو آگاہ کرینگے۔

اس موقع پرجماعت اسلامی چترال کے این اے ون کے امیدوار سابق ایم این اے چترال مولاناعبدالاکبرچترالی نے جماعت اسلامی کا منشور بیان کرتے ہوئے کہاکہ دستور پاکستان کے مطابق قرآن و سنت کی بالادستی قائم کی جائے گی۔ حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم  کی ختم نبوت اور ناموسِ رسالت کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا اور اس پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ بنیادی انسانی حقوق کا مکمل تحفظ کیا جائے گا۔ دستورِ پاکستان اور وفاقی شرعی عدالت کے فیصلوں کے مطابق سودی نظام معیشت کا مکمل خاتمہ کرنے کے لیے عملی اقدامات کیے جائیں گے۔ میڈیا کو اسلامی تہذیب و ثقافت جیسا بنانے کی ترغیب دی جائے گی، سودی معیشت اور سودی بنکاری کا خاتمہ کیا جائے گا اور بیرونی و مقامی قرضوں کی جلد ادائیگی کا شیڈول اور طریقہ کار وضع کیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی کے منشور کے چند نکات پیش کئے اگر پاکستان کی تمام سیاسی و مذہبی جماعتیں ان پر عمل پیرا ہوجائیں تو یقینا پاکستان ترقی کی راہ پر گامزن ہو سکتا ہے۔
کالاش کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے آزاد اُمیدوارلوک رحمت نے اپنے منشوربیان کرتے ہوئے کہاکہ چترال میں صحت کے بنیادی سہولیات کی فراہمی ، جدید ٹیکنالوجی سے نوجوانوں کو باعزت روزگار کے مواقع،بلدیاتی اداروں کو مالی اور انتظامی خودمختاری ، وسائل کی منصفانہ تقسیم کو یقینی بنانے،پینے کی صاف پانی ،معیاری تعلیم ،چترال کےقدرتی اور ثقافتی ورثے تک سیاحوں کو رسائی دینا ،قدرتی آفات سے نمنٹنے کے لئے انڈومنٹ فنڈ میں چارکروڑروپے رکھاجائے گااوردیگرمسائل کی حل اوروسائل پیدا کرنے کی پلان ہمارے منشورمیں شامل ہیں ۔چترال کے ترقی کے لئے کچھ اور نکات بھی منشور میں شامل کئے جائیں گے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔