اپرچترال ،راہِ حق پارٹی کےامیدوار اورآزاد امیدوار پی کے 1 جے یو آئی کے امیدوار حاجی شکیل احمد کے حق میں دستبردار

اپرچترال (ذاکرمحمدزخمی)صوبائی اسمبلی پی کے 1 پاکستان راہِ حق پارٹی کے نامزد امیدوار مولانا صاحب الدین اور ازاد امیدوار پی کے 1 مولانا شیر وزیر جمیعت علماء اسلام کے نامزد امیدوار حاجی شکیل احمد کے حق میں دستبردار ۔پاکستان راہِ حق پارٹی اور جمیعت علماء اسلام اپر چترال کےزمہ دراں گزشتہ رات مشترکہ پریس ریلیز کے ذریعے پی کے 1 چترال اپر میں جنرل الیکشن 2024 میں متفقہ طور پر جمیعت علماء اسلام کے نامزد امیدوار برائے حلقہ پی کے 1 چترال اپر حاجی شکیل احمد کی مکمل حمایت کا اعلان کیا اس موقع پر پاکستان راہِ حق پارٹی کے صدر مولانا اصف اقبال نامزد امیدوار پاکستان راہِ حق پارٹی مولانا صاحب الدین اور دیگر زمہ دراں موجود تھے جبکہ جمیعت علماء اسلام کے ضلعی امیر مولانا فتح الباری،سابق تحصیل ناظم مولانا محمد یوسف،نامزد امیدوار پی کے 1 حاجی شکیل احمد و جمیعت کے دیگر سرکردہ عمائدین موجود تھے ۔اس موقع پر دونوں پارٹی کے زمہ دراں اسے فطری اتحاد قرار دیکر علاقے کے تعمیر و ترقی کے لیے نیک فال قرار دی ۔امیر جمیعت علماء اسلام مولانا فتح الباری مختصر خطاب میں پاکستان راہِ حق پارٹی کے صدر مولانا اصف اقبال اور نامزد امیدوار مولانا صاحب الدین اور دیگر کارکنانِ راہ حق پارٹی کے ساتھ ازاد امیدوار مولانا شیر وزیر کا بھی شکریہ ادا کیا کہ موقع کی نزاکت کو بھانپتے ہوئے انہوں نے جمیعت علماء اسلام کے نامزد امیدوار اور جمیعت پر اعتماد کا اظہار کیا ۔مولانا آصف اقبال نے کہا کہ طویل نشست اور گفتگو کے بعد جمیعت علماء اسلام اور راہِ حق پارٹی تمام نکات پر
متفق ہونے کے بعد پی کے 1 چترال اپر میں جمیعت کے نامزد امیدوار حاجی شکیل احمد کا متفقہ طور پر حمایت کا اعلان کرتے ہیں اور امید ہے کہ طے شدہ نکات پر مستقبل میں بھی دونوں پارٹی عمل پیرا رہینگے ۔اس موقع پر ازاد امیدوار مولانا شیر وزیر نے کہا کہ جمیعت کے سابق ایم پی اے سے ناراضگی کے بعد ازاد حیثیت سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کر چکا تھا تاہم جمیعت کے اکابرین کی اسرار پر میں اپنے کاغذات نامزدگی واپس لیکر حاجی شکیل احمد کا غیر مشروط اور بھر پور حمایت کا اعلان اس امید کے ساتھ کرتا ہوں کہ حاجی شکیل احمد کارکنوں کو ان کا جائز مقام دیکر شکایت کا موقعہ نہیں دینگے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔