چترال کے عوامی حلقوں کی اعلی حکام سے شدید برفباری کےنقصانات کی اسسمنٹ کیلئے دیے گئے وقت میں توسیع کی اپیل

چترال (چترال ایکسپریس )چترال کے عوامی حلقوں نے وزیر اعظم پاکستان محمد شہباز شریف ،چیرمین این ڈی ایم اے ،پی ڈی ایم اے سے اپیل کی ہے کہ حالیہ شدید برفباری کےنقصانات کی اسسمنٹ کیلئے دیے گئے وقت میں توسیع کی جائے تاکہ صحیح معنوں میں لوگوں کے نقصانات کاجائزہ لیا جا سکے ۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انتظامیہ چترال کی طرف سے مختلف اداروں کے آفیسران پر مشتمل جو اسسمنٹ کمیٹی بنائی گئی ہےاس کو اتنا وقت تو دینا چاہئیے تھاکہ وہ لوگوں کے نقصانات کا جائزہ لےسکیں ۔ لیکن افسوس کا مقام ہے کہ چوبیس گھنٹوں کے اندر صرف فارمیلیٹی کے طور پر چترال ٹاون کے دو یو سیز کی نامکمل اسسمنٹ کی گئی اور چترال کے دیگر یوسیز کے نقصانات کو بالکل نظر انداز کیا گیا جبکہ یوسی ایون اور کالاش ویلیز ،دروش ،ارندو، شیشی کوہ،گولین اور گرم چشمہ سمیت کئی علاقوں میں مکانات کو نقصان پہنچے ہیں ۔ لیکن ان علاقوں میں جاکر اسسمنٹ کی ضرورت ہی محسوس نہ کی گئی ۔ عوامی حلقوں نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نے اپنے دورہ پشاور کے دوران متاثرین کی مدد کیلئے جو احکامات دیے تھے اس کو سرے سے پس پشت ڈال دیا گیا ہے یہی وجہ ہے کہ صرف ٹاون ایریا کے دو وی سیز کے علاوہ کہیں بھی نقصانات کا جائزہ نہیں لیاگیا ۔ انہوں نے وزیر اعظم سے پر زور مطالبہ کیاکہ چترال میں برفباری سے متاثر ہونے والے مکانات کی صحیح معنوں میں اسسمنٹ کی جائےاور متاثرین کو ان کے نقصانات کے مطابق معاوضہ و مددفراہم کیا جائے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔