مدرستہ البنات سینگور میں فوڈ پوائزننگ کی وجہ سے 23بچیاں ہسپتال داخل ۔ بعض طالبات علاج کے بعد فارغ ۔

چترال (چترال ایکسپریس ) چترال کے مقام سینگور میں مدرستہ البنات میں رہائش پذیر طالبات سحری کھانے کے بعد فوڈ پوائزننگ کی وجہ سے اچانک بیمار پڑ گئے ۔ جنہیں فوری طور پر ڈی ایچ کیو ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں داخل کر دیا گیا ۔جہاں ان کے علاج کے بعد طبیعت سنبھلنے پربعض کو فارغ کر دیا گیا ہے۔ بیمار طالبات کی تعداد تیئیس بتائی جاتی ہے ۔ جو مدرسے میں رہ کر علم حاصل کرتی ہیں ۔ مدرسے کے ذمہ دار کے مطابق بچیوں کی صحت اچانک بگڑ جانے کی وجہ ناقص پانی کی فراہمی ہے ۔ جس سے مدرسے کو پانی سپلائی ہوتی ہے ۔ تاہم بعض افراد کے مطابق پانی کی اس ٹینکی سے صرف مدرسے کو نہیں ،بلکہ ایک بڑی آبادی کو پانی فراہم ہورہی ہے اگر پانی میں مسئلہ ہوتا تو دوسرے لوگ بھی اس سے متاثر ہوتے

ڈی پی او چترال نے ڈی ایچ کیو ہسپتال چترال کا دورہ کرکے متاثرہ بچیوں کی عیادت کی اور واقعے کا نوٹس لیا ہے ۔جس کی انکوائری کی جارہی ہے ۔ تاہم مدرسے کو ایک ہفتے کیلئے عارضی طورپر بند کردیا گیا ہے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔