اپرچترال میں ایک مہینے کے لئے دفعہ 144 نافذ

اپرچترال(ذاکرمحمدزخمی)اپرچترال ضلعی انتظامیہ کی طرف سے جاری ایک اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ عام طور پر عیدالفطر کے موقع پر بعض بے ضمیر عناصر/نوجوان ہوائی فائرنگ اور ون ویلنگ کرتے ہیں جس سے انسانی جانوں کو شدید خطرات لاحق ہوتے ہیں اور ماضی میں متعدد ہلاکتیں بھی ہوچکی ہیں۔ اسی طرح غیر قانونی افغان مہاجرین بھی شہر کے علاقوں اور بازاروں میں داخل ہو سکتے ہیں جو سیکورٹی کو خطرات لاحق ہیں۔

جبکہ شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ اور ضلع اپر چترال میں امن و امان کی کسی بھی ناخوشگوار صورتحال کو روکنے کے لیے ایسی تمام سرگرمیوں پر پابندی عائد کرنے کے لیے کافی بنیادیں موجود ہیں جن سے عام زندگی کے ساتھ ساتھ امن و امان کی صورتحال کو بھی شدید خطرہ لاحق ہے۔ محکمہ داخلہ و قبائلی امور خیبر پختونخوا نے سرکلر لیٹر نمبر SO (Sec-II)HD/Misc:/2024 مورخہ 4/4/2024 کے ذریعے۔

لہذا، I. محمد عرفان الدین، ڈپٹی کمشنر/ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اپر چترال دفعہ 144 Cr PC کے تحت حاصل اختیارات کو بروئے کار لاتے ہوئے ضلع اپر چترال میں درج ذیل سرگرمیوں پر پابندی عائد کرتے ہیں۔

‏(a) شہری علاقوں اور بازاروں میں غیر قانونی افغان مہاجرین کا داخلہ۔

‏(b) ہتھیاروں/ہوائی فائرنگ کی نمائش۔

‏(c) موٹر سائیکلوں کا ایک پہیہ چلانا۔

‏(d) فائر ورکس۔

‏(e) لاؤڈ سپیکر (ووفرز)۔

(1) گھومنے والی لائٹس / وارننگ لائٹس والی نجی گاڑیاں۔

‏(g) سیاحوں کے کھانا پکانے کے لیے جنگل کی جگہ پر آگ۔

‏(h) غیر قانونی نمبر پلیٹس۔

(1) رنگین شیشے والی گاڑی۔

یہ حکم ضلع اپر چترال میں فوری طور پر نافذ العمل ہو گا اور ایک ماہ کی مدت تک نافذ رہے گا۔

اس حکم کی کسی بھی خلاف ورزی کے نتیجے میں تعزیرات پاکستان کی دفعہ 188 کے تحت کارروائی کی جائے گی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔