چھوٹی زبانوں کو تحفظ دینے کیلئے ادبی تنظیمات اورمیڈیامشترکہ طورپرکوشش کریں۔اعجازاحمد

چترال (محکم الدین)زبانوں کو معدومیت سے بچانے اور انہیں تحفظ فراہم کرنے کیلئے کام کرنے والا ادارہ فورم فار لینگوئج انیشیٹیو ( ایف ایل آئی ) کے میڈیا اینڈ کمیونیکیشن آفیسر اعجاز احمد نے کہا ہے کہ چترال کی مقامی چھوٹی اور بڑی زبانیں اس علاقے کا حسن اور گلدستے کی مانند ہیں ان میں سے کسی بھی پھول کو مرجھانے نہیں دیاجانا چائیے اور یہ تب ہی ممکن ہے کہ چھوٹی زبانوں کو تحفظ دینے کیلئے زبانوں پر کام کرنے والی ادبی تنظیمات اور میڈیا مشترکہ طور پر کوشش کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک مقامی ہوٹل میں پریس کلب چترال کے صدر ظہیرالدین و ممبران کے ساتھ ایک نشست میں خطاب کرتے ہوئےکیا جس میں نسیم حیدر ٹریننگ منیجر اور شمس ولی خان فنانس منیجر بھی موجود تھے ۔نشست میں چترال کی بولیوں کو درپیش خطرات اور ان کے تحفظ کیلئے اقدامات پر بھی بات چیت ہوئی اور اس امر کا اظہار کیا گیا کہ علاقائی چھوٹی زبانوں کے حامل افراد کیلئے ضروری ہے کہ وہ اپنی سرگرمیوں کو اجاگر کرنے کیلئے میڈیا سے قریبی رابطہ رکھیں ۔

اس موقع پرصدر چترال پریس کلب ظہیرالدین نے چترال کے مادری زبانوں کی ترقی اور تحفظ کیلئے ایف ایل آئی کو بھر پور تعاون کی یقین دہانی کی۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔