جامعہ چترال کی طرف سے بی۔ایس فیسوں سے متعلق وضاحتی بیان،فیسوں میں 57 فیصد اضافے کی خبریں بے بنیاداورمن گھڑت ہیں۔

چترال (چترال ایکسپریس) چترال یونیورسٹی کی طرف سے جاری ایک وضاحتی بیان میں کہا گیا ہے کہ ملکی اخبارات،سوشل میڈیا اور آن لائن اخبارات میں چترال یونیورسٹی میں بی ایس پروگرام کے فیس سٹرکچر کے حوالے سے غلط معلومات گردش کر رہی ہیں۔ واضح رہے کہ بی ایس پروگرام کی فیسوں میں 57 فیصد اضافے کی خبریں بے بنیاد اور من گھڑت ہیں۔
یونیورسٹی آف چترال نے بی ایس پروگرام کی فیسوں میں کسی قسم کا کوئی اضافہ نہیں کیا ہے۔ تاہم یونیورسٹی نے الحاق شدہ کالجوں کےامتحانی فیس میں معمولی تبدیلیاں کی ہیں۔ فیسوں میں حالیہ ایڈجسٹمنٹ الحاق شدہ کالجوں کی امتحانی فیسوں سے متعلق ہے۔ امتحانی فیسوں پر نظر ثانی کا فیصلہ ہمارے اختیار سے باہرہے گزشتہ دو تین سالوں سے مہنگائی مسلسل بڑھ رہی ہے اس وجہ سے ضروری تھا، جیسے امتحانی مواد کی قیمتوں میں اضافہ، بشمول امتحانی شیٹس۔وغیرہ۔
یونیورسٹی انتظامیہ نے عوام سے گزارش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسی بے بنیادخبروں پر یقین کرنےسےگریز کریں اور براہ راست قابل اعتماد ذرائع سے معلومات حاصل کریں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔