ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس نفاذ کے خلاف تجار یونین چترال اور سیاسی نمائندوں کی اہم میٹنگ

14مئی کوپورےچترال میں ہڑتال کرنے کا اعلان

چترال (چترال ایکسپریس)بازار مسجد چترال لوئیر میں ملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس کے نفاذ کے خلاف معروف عالم دہن مولانا اسرار الدین الہلال کے زیرصدارت تجار برادری و سیاسی قائدین کی جانب سےمشترکہ میٹنگ  ہوئی ۔اجلاس میں عیدالحسین صدر اے این پی چترال لوئیر،سنیئرنائب صدر تجار یونین ملک اسرار،سرپرست اعلی تجار یونین حاجی عبدالناصر،جنرل سیکرٹری تجار یونین ورہنما جے یوآئی سراج احمد،سابق ضلعی ناظم ورہنما جماعت اسلامی مغرفت شاہ، شبیر احمد سابق صدر تجار یونین اور تجار برادری نے شرکت کی۔ مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی ترقی کے لیے ٹیکس ادا کرنا نہایت ضروری ہے لیکن حکومت پہلے عوام کو سہولیات مہیا کرکے بعد میں ٹیکس لگائے تو کوئی حرج نہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کاملاکنڈ ڈویژن میں ٹیکس لاگو کرنا غریب عوام پر ظلم ہوگا۔ کیونکہ ملاکنڈ ڈویژن میں حکومت کی طرف سے عوام کو کوئی سہولیات میسر نہیں ۔

صدر محفل مولانا اسرار الدین الہلال نے اپنےخطاب میں کہا کہ انتظامیہ سے ہم بخوبی باخبر  ہیں وہ کچھ نہیں کرسکتے آج غیرت دیکھا نے کا وقت آگیا ہے ہمارے ٹیکسوں سے یہ افسران کروڑوں روپے کے گاڑیوں کو لیکر عیاشیاں کرتے ہیں۔ انہوں پورے چترال کے تجار برادری سے اپیل کیا کہ وہ ملاکنڈ ڈویژن کے دوسرے اضلاع کے ساتھ اظہار یکجہتی کرکے 14 مئی کو ہر صورت میں ہرتال کرکے حکومت کو ظالمانہ ٹیکس کے نفاز کے فیصلے کو واپس لینے پر مجبور کریں۔میٹنگ  میں عوام سےبھی درخواست  کی گئی کہ وہ پڑتا ل کو کامیاب بنانے میں تجار برادری کا ساتھ دیں کیونکہ ٹیکس لاگو ہونے سے بوجھ براراست عوام پر پڑےگا میٹنگ کے اختتام پرمتفقہ طورپر 14 مئی 2024 کو چترال سٹی میں مکمل طور پر شٹر ڈاؤن ہرتال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔