پی ٹی آئی کا مقصد تاریخی شندور فیسٹیول کو سیاسی شو میں تبدیل کرنا ہے۔خالد حسین تاج

تحریک انصاف کا مقصد ٹیکس دہندگان کے خرچ پر تاریخی شندور فیسٹیول کو سیاسی شو میں تبدیل کرنا ہے۔ہم چترال اور گلگت بلتستان کے عوام تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کو ایسا نہیں کرنے دینگے

شندور پولو فیسٹیول کی ایک بھرپور تاریخ ہے اور تقریباً 100 سالوں سے یہ تقریب مقامی لوگوں کے کھیلوں کی صلاحیتوں کے ساتھ ساتھ ان کے شاندار ثقافتی ورثے کو موسیقی کے تہواروں، رقص اور کھانوں کی شکل میں پیش کرنے میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔ حالیہ برسوں میں، ایونٹ میں ایف سی، پیرا گلائیڈرز اور پیرا ٹروپرز کے پائپر بینڈز (زیادہ تر مقامی افسران اور جوانوں نے شرکت کی) کی پرفارمنس کو بھی شامل کیا ہے، جس سے مقامی اور بین الاقوامی سامعین بھی لطف اندوز ہو رہے ہیں
اس سال شندور پولو ٹورنامنٹ 28 جون سے 30 جون 2024 تک شیڈول ہے، خیبر پختونخواہ حکومت کی طرف سے ایک بڑی رقم (130 ملین) یعنی 13 کروڑ روپے جاری کیے گئے ہیں۔ مذکورہ رقم کا احاطہ کرنا فرض ہے؛ پولو کے کھلاڑیوں کی فلاح و بہبود، جیتنے والی ٹیموں کو انعامی رقم، عوام کے لیے ضروری صفائی ستھرائی کی فراہمی، غیر ملکی سفارت کاروں/ معززین کو سیکیورٹی اور ایونٹ کے بعد پنڈال کی صفائی وغیرہ یہ سب کچھ اس فنڈ سے کی جاتی ہے
تاہم اس سال یہ میلہ جو کہ تاریخی طور پر کھیلوں کے ساتھ ثقافتی پروگرام بھی رہا ہے، خیبر پختونخواہ حکومت کی جانب سے تحریک انصاف کے سیاسی شو میں تبدیل کرنے کا منصوبہ بنایا جا رہا ہے، جس میں تحریک انصاف کی مقامی قیادت کو وفاقی حکومت، چیف جسٹس اور ریاستی اداروں کے خلاف نعرے لگانے کا کام سونپا گیا ہے۔ تحریک انصاف کی مذکورہ منصوبہ بندی چترال کے مقامی لوگوں کے درمیان ایک کھلا راز ہے تحریک انصاف کی مقامی قیادت کو یہ ٹاسک دیا گیا ہے کہ وہ کارکنوں کو عمران خان کے حق میں اور ان کی رہائی کے لیے نعرے لگانے کے لیے تیار کریں۔

بحیثیت سیاسی کارکن میں ہر قسم کے سیاسی Activities کے حق میں ہوں ہر ایک سیاسی جماعت کا حق ہے کہ وہ آئین اور قانون کے دائرے میں رہتے ہوئے اپنی سیاسی Activities کرے سیاسی جماعتیں جب سیاسی Activities کریں گے تب ہی جمہوریت مضبوط ہوگی
مگر کسی مخصوص سیاسی پارٹی کی ایسی سیاسی سرگرمیاں اور خواہشات ٹیکس دہندگان کے پیسوں سے نہیں ہونی چاہئے

شندو فیسٹیول پر صوبائی حکومت کے 130 ملین یعنی 13 کروڑ خرچ ہونگے یہ 13 کروڑ عوام کے ٹیکس کے پیسوں سے خرچ ہونگے شندور فیسٹیول ایک کھیل اور ثقافتی پروگرام ہے کئی سالوں سے شندور کے مقام پر چترال اور گلگت بلتستان کی ٹیموں کے درمیان یہ ایونٹ منعقد ہو رہا ہے اس میلے کو ہمیشہ سیاست سے دور رکھا گیا ہے اس کی ایک تاریخ ہے چند دن پہلے چترال میں ڈسٹرکٹ پولو ٹورنامنٹ میں تحریک انصاف کے ضلعی صدر اور چترال اے پولو ٹیم کے کپتان سکندر الملک اور ان کے کارکنوں نے پولو گراؤنڈ کے اندر سیاسی نعرے لگائے، اس پر عوام نے شدید ردعمل دیا چترال کے عوام پولو سے بہت محبت کرتے ہیں عوام کی شدید ردعمل کے بعد چترال اے کے کپتان شہزادہ سکندر الملک فائنل میچ نہیں کھیل سکا۔ اب مجھ تک جو خبریں پہنچ رہی ہے اس کے مطابق تحریک انصاف والے شندور فیسٹیول کے موقع پر بڑے پیمانے پر اس منصوبے کو دہرانے کا پلان بنا چکے ہیں جو ڈسٹرکٹ پولو ٹورنامنٹ کے سیمی میں چترال پولو گراؤنڈ میں اپنایا گیا

اس حوالے سے یہ خبریں چل رہی ہے وزیراعلیٰ خیبر پختونخواہ کی ہدایت پر تحریک انصاف کے ایم این ایز/ ایم پی اے کی بڑی تعداد کو KPK حکومت کے سرکاری خرچ پر شندور پہنچایا جائے گا اور خود وزیراعلیٰ علی آمین گنڈاپور بھی کچھ دن لاسپور میں قیام کریں گے۔ مقامی ہوٹلوں اور پرائیویٹ گھروں کو KPK حکومت نے ضلع انتظامیہ کے ذریعے سیاسی مقصد کے لیے مکمل طور پر کرائے پر لیا ہے

چترال اور گلگت بلتستان کے عوام پڑھے لکھے اور باشعور ہیں اور وہ جانتے ہیں کہ KPK حکومت اس وقت کیا کر رہی ہے۔ ہمیں اس کا جواب چاہیے اور ہم اس تہوار کو کسی بھی پارٹی کے سیاسی شو میں تبدیل نہیں ہونے دیں گے۔ ہم مقامی لوگ مہمانوں کو خوش آمدید کہتے ہیں اور ہم چاہتے ہیں کہ آپ شندور آئے لیکن ہم کسی خاص سیاسی جماعت کے ذاتی مفادات کے لیے شندور فیسٹیول کو متنازع نہیں ہونے دینگے

چترال اور گلگت بلتستان کے پڑھے لکھے اور باشعور عوام کی جانب سے غیر جانبدار افراد سے اپیل کی جاتی ہے کہ وہ تحریک انصاف اور پختونخواہ حکومت سے سوال کریں کہ وہ اپنے سیاسی مفادات کے لیے ہر مثبت تقریب اور فورم کو کیوں تبدیل کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔ چترال میں ترقیاتی کاموں پر توجہ دیں اور شندور کو اپنے سیاسی ہنگاموں سے دور رکھیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
زر الذهاب إلى الأعلى
error: مغذرت: چترال ایکسپریس میں شائع کسی بھی مواد کو کاپی کرنا ممنوع ہے۔