تازہ ترین

بالائی چترال کے گاؤں ریچ سلاندور کی تین لڑکیاں پل عبور کرتے ہوئے دریائے تورکہو میں گرگئی

چترال ( نمائندہ چترال ایکسپریس ) بالائی چترال کے گاؤں ریچ سلاندور کی تین سہیلیاں پیدل پُل عبور کرتی ہوئی پھسل کر دریائے تور کہو میں گر کر لاپتہ ہو گئیں ۔ جن میں سے ایک عطیہ بی بی دختر محمد اقبال کو زندہ نکال لی گئی ہے ۔ جبکہ دو نعشوں کی تلاش جاری ہے ۔ تفصیلات کے مطابق ریچ سلاندور کی پندرہ سالہ ہم عمر سہیلیاں بی بی شہریہ دختر شاہ اکرم ،نزرانہ بی بی دختر زرمست اور عطیہ بی بی دختر محمد اقبال دریا پار دوسرے گاؤں سے اپنے گھروں کو جارہی تھیں ، کہ دونوں گاؤں کو ملانے والی خستہ حال پیدل پُل عبور کرتے ہوئے پُل کے جھولنے سے توازن برقرار نہ رکھ سکیں ۔ اور تینوں دریائے تورکہو کی بے رحم موجوں میں گر کر لاپتہ ہو گئیں ۔ تاہم بعد آزان ایک عطیہ بی بی دختر محمد اقبال کو دریا سے زندہ نکال لی گئی ،جبکہ دوکی نعشوں کی تلاش جاری ہے ۔دو جوانسال طالبات سہیلیوں کی ہلاکت پر گاؤں میں انتہائی صدمے کا ماحول ہے ۔ اور مقامی لوگ اس واقعے کے ذمہ دار حکومت کو قرار دے رہے ہیں ۔کہ حکومت کے تعمیر کردہ پیدل پُل کافی عرصے سے خستہ حالی کا شکار ہو چکا تھا ۔ اور بار بار مطالبے کے باوجود اس کی تعمیر ومرمت پر توجہ نہ دی گئی۔ جس کی وجہ سے آج تین انسانی جانیں ایک ساتھ ضائع ہوئیں ۔ درین اثنا چترال کے علاقہ گرم چشمہ کی سڑک دروشپ کے مقام پر نالہ مُردان میں طغیانی آنے کی وجہ سے بند ہو گیا ہے ۔ جبکہ دو گاڑیاں بھی پانی میں بہہ گئی ہیں ۔ تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے ۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق