چترال لوئر

تحریری امتحان میں پہلی پوزیشن لینے کے باوجود ان کو ناکام قرار دینا میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کی طرف سے میرٹ کو بالائے طاق رکھنے کی مترادف ہے ۔زاہد احمد

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) ژانگ بازار چترال کی رہائشی زاہد احمد نے پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت سے اپیل کی ہے کہ میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال چترال ڈاکٹر فیض الملک جیلانی کے خلاف کاروائی کی جائے جوکہ میرٹ کے خلاف تعیناتی کرکے میرٹ اور قانون کی بالا دستی کے بارے میں حکومتی دعوے کی نفی کردی ہے ۔ ایک اخباری بیان میں انہوں نے کہاہے کہ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال چترال کے ایم ۔ ایس نے گزشتہ مئی کے مہینے میں جونئیر کلینیکل ٹیکنیشن پیتھالوجی کی اسامی کے لئے اشتہار طلب کیا جس میں درخواست دینے کی آخری تاریخ 10جون تھی لیکن سیاسی اثرورسوخ کے حامل ایک امیدوار سے 18جولائی کو درخواست وصول کرلیا گیا اور تحریری ٹیسٹ میں پانچویں پوزیشن پر ہونے کے باوجود ان کی سیلیکشن اور تقرری عمل میں لا کر میرٹ اورانصاف کا جنازہ نکال دیا ۔ زاہد احمد نے کہا کہ تحریری امتحان میں پہلی پوزیشن لینے کے باوجود ان کو ناکام قرار دینا میڈیکل سپرنٹنڈنٹ کی طرف سے میرٹ کو بالائے طاق رکھنے کی مترادف ہے ۔ا ن کا کہنا تھاکہ پی ٹی آئی سے تعلق رکھینے والیMYXJ_20160729145725_fast سینیٹر ثمینہ عابد صاحبہ نے گزشتہ ماہ ہسپتال کے دورے کے موقع پر ہسپتال میں صفائی کے فقدان اور بد انتظامی دیکھ کر برہمی کا اظہار کرکے ان کو فوری طور پر ہٹانے کے عزم کا اظہار کیا تھا جوکہ ان کی نااہلی کا ثبوت ہے اور ایسے شخص سے میرٹ کا توقع رکھنا بھی عبث ہے ۔ انہوں نے پی ٹی آئی کے قائد اور وزیر اعلیٰ سے اپیل کی ہے کہ وہ نواز شریف کے خلاف تحریک احتساب چلانے اور دھرنا دینے سے پہلے اپنے گھر میں میرٹ کے قتل عام کی خبر لیں اور حقدار کو اس کا حق دلوائیں۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ

اترك تعليقاً

زر الذهاب إلى الأعلى