صحت و صفائی

‘‘(Migraine)آدھا سیسی ’’مائیگرین

۔۔۔۔۔حکیم فضل محمد۔۔۔۔۔۔


آدھا سیسی اردو میں‘‘درد شقیقہ ‘‘عربی میں صداع نصفی اور انگریزی میں مائیگرین اور طبی نام ’’آدھا سیسی‘‘ہے۔شقیقہ کے معنی ایک مشق یعنی ایک حصہ کے ہیں۔شقیقہ ایک خاص قسم کا درد سرہے جو دوروں کے ہوا کرتا ہے یہ درد اکثر آدھے سر میں دائیں یا بائیں جانب ہوتا ہے لیکن بعض اوقات سارے سر میں بھی ہوتا ہے جو ایک جانب زیادہ اور دوسری جانب کم ہوا کرتا ہے اکثر مریضوں کو اسکا دورہ طلوع آفتاب سے شروع ہوکر رفتہ رفتہ بڑھتا ہے اور زوال آفتاب کے ساتھ کم ہونے لگتا ہے۔یہاں تک کہ غروب آفتاب تک بالکل ٹھیک ہوجاتا ہے۔اصل میں درد شقیقہ بخارات سرکے کمزور حصہ میں جمع ہوکر اس درد کا باعث ہوتے ہیں درد کی مدت چندمنٹ سے لے کر کئی دن تک ہوسکتی ہے۔
اسباب:
یہ مرض اکثر موروثی ہوتا ہے مردوں کی نسبت عورتوں کو زیادہ ہوتا ہے۔اس کا اصل اور خاص وجہ نزلی رطوبتیں ہوتی ہے جو نزلہ اورزکام کی علاج میں غلطی ہونے یا بدپرہیزی کرنے سے سر کی ایک طرف بند ہوکررہ جاتی ہے اور درد پیدا کرتی ہے اور کبھی سخت محنت،عورتوں میں حیض کی خرابی ،یسٹرا فاقہ کشی،عام جسمانی کمزوری،فساد خون،متواترشب بیداری،بد ہضمی،تیز روشنی کو دیکھنے اور تیز خوشبو ؤں کو سونگھنے کے علاوہ کثرت جماع،امراض گردہ،ملیریا بخار،نظر کی خرابی اور عدم پابندی اصول حفظان صحت اس کے خاص اسباب ہیں۔
علامات:
جب دورہ شروع ہونے والا ہوتا ہے تو کچھ دیر پہلے طبیعت سست اور سرگھومتا ہے اور آنکھوں کے سامنے چنگاریاں سی اُرتی نظر آتی ہیں پھر درد اسی طرح شروع ہوتی ہے کہ پہلے کنپٹی اور ابرومیں دھیما دھیما درد ہونے لگتا ہے اور بتدریج درد بڑھ کر تیز ہوجاتا ہے۔کنپٹی کی رگیں تیزی کے ساتھ چلنے اور تڑپنے لگتی ہیں جوں جوں رگیں تڑپتی ہیں درد زیادہ ہوجاتا ہے یہاں تک کہ کچھ دیر میں اتنا شدید ہوجاتا ہے کہ گویا سرپھٹا جاتا ہے یہ درد حرکت کرنے سے بڑھ جاتا ہے اور بالعموم سر کے ایک جانب ہوا کرتا ہے اور بعض اوقات سارے سر میں ہونے لگتا ہے لیکن تاہم ایک جانب درد شدید اور دوسری جانب خفیف ہوتا ہے اگر درد شقیقہ بخارات کی وجہ سے ہو تو مقام درد کا لمس گرم نبض تیز ہلکا سردرد ہوا اور پانی سے درد کو تسکین ہوتی ہے اگر ریاح کی شدت سے ہوتو لمس گرم اور سرمیں تناؤہوتا ہے اور بعض اوقات مریض آواز اور روشنی سے نفرت کرنے لگتا ہے۔آنکھوں کے سامنے اندھیرا چھا جاتا ہے اور کان بجنے لگتے ہیں چہرے کی رنگت پھیکا پڑجاتا ہے جی متلاتا ہے ابکائیاں اور کھبی قے ہوتی ہے مریض جسمانی یا دماغی کام کرنے کے قابل نہیں رہتا۔آخر میں ایک طرف کی ابرو میں درد ٹھہر جاتا ہے اور بالعموم دو تین گھنٹے سے لے کر چوبیس گھنٹے تک لیکن کھبی کھبار درد شدید ہونے کی صورت میں دوتین دن تک رہنے کے بعد مریض کو نیند آجاتی ہے جب نیندسے بیدار ہوتا ہے تو درد کی شکایت بالکل نہیں ہوتی پھر بالعموم اس کے تین چار ہفتے کے بعد اور گاہے چند دنوں کے بعد درد کا دورہ ہوتا ہے۔
علاج:
مریض کو کسی قدر تاریک کمرے میں نرم بسترے پر آرام کے ساتھ لٹائیں اس کے بعد مریض کے پاس کسی قسم کا شور غل نہ ہونے دیں درد شروع ہونے سے پہلے یا درد کی حالت میں کھانے کیلئے کوئی غذا نہ دیں اگر کھانا کھانے کے بعددرد شروع ہوجائے تو سنکنجبین چار تولہ نیم گرم پانی میں ملاکر پلائیں اور قے کرائیں اگر معدہ خالی ہو اور ابکائیاں آتی ہوں تو برف چبائیں،سوڈا واٹر میں برف ملاکر گھونٹ گھونٹ پلائیں۔اس کے علاوہ یہ نسخہ بناکر استعمال کریں
دھنیا خشک تین گرام،اسطوخودوس تین گرام،کالی مرچ چھ عدد باریک سفوف بنائیں صبح سورج نکلنے سے پہلے تین رتی کھاکر پانی پئیں اور ایک گھنٹہ آرام کریں یونانی مرکبات میں اطریفل اسطو خودوس یا اطریفل کشنیز چھ گرام سونے سے پہلے ہمراہ نیم گرم دودھ لیں ان کے علاوہ قدرتی طریقہ علاج میں سرسوں کے تیل کی مالش سرپر کرے جو نہایت مفیدہے ۔

اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق