تازہ ترین

خیبر پختونخوا حکومت نے چترال میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں شروع کر دی ہیں۔ڈی سی چترال

چترال ( نما یندہ چترال ایکسپریس)صوبائی حکومت نے چترال کی تحصیل دروش کے گاؤں ارسون میں جہاں بارش اور سیلابی ریلوں نے بڑے پیمانے پر تباہی مچا دی تھی، امدادی کارروائیاں شروع کردی۔ ڈپٹی کمشنر چترال اسامہ وڑائچ کے مطابق پہلے مرحلے میں اب تک 50ٹینٹس ، 50گھرانوں کے لئے راشن کی پہلی کھیپ ارسون گاؤں میں پہنچا دی گئی ہے ۔اور صوبائی حکومت کی جانب سے امدادی کام تیزی سے جاری ہے ۔ ڈی سی نے بتایا کہ ارسوں گاؤں میں بارش اور سیلابی ریلے کی وجہ سے 31افراد لاپتہ ہو گئے تھے جن میں سے چھ افراد کی لاشیں مل گئی ہیں جبکہ 37مکانات پورے اور 48جزوی طور پر تباہ ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے علاقے میں زخمی افراد کے لئے ایک میڈیکل کیمپ بھی قائم کر دیا ہے او ر زخمیوں کو لے  جانے کے لئے ہیلی کاپٹر کا بھی انتظام کر دیا ہے ۔ علاوہ ازیں علاقے میں جو پینے کے پانی کی بحالی کاکام بھی شروع کر دیا ہے ۔ دریں اثناء جان بحق افراد کے لئے صوبائی حکومت نے تین تین لاکھ دینے کا اعلان کیا ہے ۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق