تازہ ترین

وزیر اعظم کا دورہ چترال،لواری ٹنل اگلے سال مکمل کرنے،گولین گول ہائیڈل پاؤر پراجیکٹ سے30 میگاواٹ بجلی فراہمی کا اعلان

چترال (نمائندہ چترال ایکسپریس) وزیر اعظم نواز شریف نے بدھ کے روز چترال میں زلزلہ کی تباہ کاریوں کا معائنہ کرنے کے بعد متاثرین زلزلہ اور ضلع کونسل کے ممبران کی ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے ضلعے کی ترقی کے لئے متعدد اقدامات کو اعلان کیا جن میں لواری ٹنل پراجیکٹ کو اگلے سال کے آخر تک مکمل کرنے اور چترال شہر اور مضافات کو گولین گول کی زیر تعمیر ہائیڈل پاور پراجیکٹ سے 30میگاواٹ بجلی کی فراہمی کرکے یہاں سے لوڈ شیڈنگ کا ہمیشہ کے لئے خاتمہ کرنے اور انڈسٹریز کو ترقی دینا شا مل ہیں۔ وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کی موجودگی میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے سختی سے ہدایت کی کہ پیر کے روز سے ہی متاثرین زلزلہ کو امدادی چیک دینا شروع کیاجائے جبکہ متاثرین کو موسم سرما کے مطابق خاص کوالٹی کے خیمے فراہم کے لئے این ڈی ایم اے کو ہدایات جاری کردی۔ انہوں نے کہاکہ امدادی سرگرمیوں میں کوئی تاخیر برداشت نہیں کیا جائے گا کیونکہ چترال میں موسم سرما کا پہلے ہی آغاز ہوچکا ہے اور متاثرہ لوگ شدید مشکلات میں مبتلا ہیں۔ نواز شریف نے کہاکہ ہم نے ماضی میں مختلف حکومتوں کی طرف سے چترال کے ساتھ ناانصافیوں کا ازالہ کا تہیہ کرلیا ہے جن کے ادوار میں لواری ٹنل جیسی اہمیت کے حامل منصوبے کو فنڈ فراہم نہیں ہوئے ۔ انہوں نے چترال کے اندر تین اہم نوعیت کی سڑکوں چترال شندور ، چترال گرم چشمہ روڈ اور چترال بمبوریت روڈ کو معیار کے مطابق تعمیر کرنے کا بھی اعلان کیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ وہ اگلے مہینے دوبارہ چترال کا دورہ کرینگے اور بحالی کے کاموں کامعائنہ کرینگے۔ درین اثناء وزیر اعظم کے دورے کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے اور ان کے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں متوقع آمد کے پیش نظر سڑک کو بند کردیا گیا تھا اور میڈیسن مارکیٹ کو بھی جبری طور پر بند کیا گیا تھا جبکہ پروگرام کے مطابق جغور گاؤں میں دورے کو کنسل کرنے پر مقامی عوام مشتعل ہوکر ان کے خلاف نعرہ بازی کی۔


اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں

متعلقہ مواد

اترك تعليقاً

إغلاق