تازہ ترین

اے کے آر ایس پی اور پیڈو کو بجلی فنڈز میں خرد برد کی اجازت نہیں دی جائیگی۔عمائدین یورجوع گرم چشمہ کا پریس کانفرنس

چترال ( نمائندہ چترال ایکسپریس)گرم چشمہ کے مقام یورجوع کلسٹر کے ممبران سردارخان ، رحمت نور ، حکیم محمد جنرل کونسلر ، شیر ولی ، سلطان علی زار ، امیر بیگ اور عصمت خان نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آغاخان رورل سپورٹ پروگرام ، پختونخوا الیکٹرک ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن پیڈو ،گرم چشمہ ایریا ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن پر الزام لگایا ہے۔کہ مذکورہ ادارے ساز باز کرکے نئی بجلی گھروں کی تعمیری فنڈ کو پرانی بجلی گھروں کی تعمیر و مرمت پر خرچ کرکے فنڈ ہڑپ کر نے کی مذموم کوشش کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا ،کہ یورجوع میں مقامی کلسٹر نے 1995میں اے کے آر ایس پی کے تعاون سے 50KVکا منی ہائڈل پاور سٹیشن تعمیر کیا ۔ بعد آزان جب یہ بجلی گھر آبادی کیلئے ناکافی ہوا ۔ تو ٹھونک کے مقام پر اے کے آر ایس پی کے تعاون سے دوسرا بجلی گھر تعمیر کیا گیا ۔ جس سے آٹھ دیہات کی آبادی مستفید ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا ، اب صوبائی حکومت کی طرف سے نئی منی ہائیڈل پاور سٹیشنوں کی تعمیر کیلئے حکومت خیبر پختونخوا نے فنڈ دی ہے ۔ لیکن یہ فنڈ مذکورہ تینوں ادارے ملی بھگت سے خرد برد کرنے کیلئے نئی بجلی گھر تعمیر کرنے کی بجائے پرانے بجلی گھروں پر خرچ کرکے اُنہیں نیا ظاہر کر رہے ہیں ۔ اور اس سلسلے میں یورجوغ میں تعمیر شدہ پچاس کے وی بجلی گھر کو مقامی کلسٹر کے ممبران سے پوچھے بغیر منہدم کیا گیا ہے ۔ اور بجلی گھر کیلئے منظور شدہ ایک کروڑ پچاس لاکھ روپے کے فنڈ کو غبن کی سازش تیار کی گئی ہے۔ انہوں نے وزیر اعلی خیبر پختونخوا ،ضلع ناظم چترال اور ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ کیا ۔ کہ اس کی انکوائری کی جائے ۔ اور ذمہ دار لوگوں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے ۔ بصورت دیگر علاقے میں پیدا ہونے والے ناسازگار حالات کی ذمہ داری اے کے آر ایس پی اور پیڈو( PEDO)پر ہوگی ۔
اس خبر پر تبصرہ کریں۔ چترال ایکسپریس اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں
اظهر المزيد

مقالات ذات صلة

اترك تعليقاً

إغلاق